اب اور تب !

اب اور تب !
کہا اس نے ـــــــــــــــ
مجھے تب واقعی تم سے محبت تھی
کہا میں نے ـــــــــــــــــــ
مجھے تو آج بھی تم سے محبت ہے
وہ تب کی بات کرتی ہے
میں اب کی بات کرتا ہوں
مگر جو فاصلہ تب اور اب کے درمیاں حائل ہے
وہ ہم سے تو مل کر بھی سمیٹا جا نہیں سکتا
وہ اب تک آ نہیں سکتی
میں تب کو پا نہیں سکتا !!

Read in Roman

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *